سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں دس سے پندرہ فیصد اضافے کا امکان

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 5 تا 15 فیصد اضافہ کیا جا سکتا ہے۔ذرائع وزارت خزانہ کے مطابق پے اینڈ پنشن کمیشن آئندہ بجٹ سے قبل اپنی رپورٹ جمع نہ کروا سکی۔وزیراعظم نے کمیشن کو کام مکمل کرنے کیلئے مزید مہلت دینے کا فیصلہ کر لیا۔پے اینڈ پنشن کمیشن کی مدت 30 جون 2022ء تک بڑھا دی گئی۔ذ

رائع کےمطابق کمیشن 30 جون تک اپنی سفارشات پیش کریگا۔سابقہ حکومت نے گریڈ ایک سے 19 تک کے ملازمین کیلئے ڈسپیرٹی الائونس یکم مارچ 2022ء سے دینے کی منظوری دی تھی۔یاد رہے کہ موجودہ حکومت نے پنشن میں 10 فیصد اضافے اور کم از کم ماہانہ تنخواہ 25؍ ہزار کرنے کا اعلان کیا تھا۔

تنخواہوں میں اضافے کے لیے حکومت تین مختلف آپشنز پر غور کر رہی ہے۔تنخواہوں میں پانچ، دس اور پندرہ فیصد اضافہ کیا جا سکتا ہے۔گریڈ ایک سے 19 تک کے ملازمین کیلئے تنخواہوں میں پانچ سے دس فیصد ایڈ ہاک الائونس کی مد میں اضافہ کیا جا سکتا ہے۔گریڈ 20تا 22کے ملازمین کیلئے دس سے 15؍ فیصد تک اضافہ کیا جا سکتا ہے۔

پنشن میں اضافے کے لیے بھی دو آپشنز زیر غورہیں۔حکومت پنشن میں پانچ تا دس فیصد تک اضافہ کر سکتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں